Urdu Poems for Children (Kids) – 2- Bachon Ki Nazmain

پانچ چوہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ از صوفی غلام تبسم

پانچ چوہے گھر سے نکلے

کرنے چلے شکار

ایک چوہا رہ گیا پیچھے

باقی رہ گئے چار

چار چوہے جوش میں آکر

لگے بجانے بین

ایک چوہے کو آگئی کھانسی

باقی رہ گئے تین

تین چوہے ڈر کر بولے

گھر کو بھاگ چلو

ایک چوہے نے بات نہ مانی

باقی رہ گئے دو

دو چوہے پھر مل کر بیٹھے

دونوں ہی تھے نیک

ایک چوہے کو کھا گئی بلی

باقی رہ گیا ایک

اک چوہا جو رہ گیا باقی

کرلی اس نے شادی

بیوی اس کو ملی لڑاکا

یوں ہوئی بربادی

 —–

 کام کریں بس  کام کریں

محنت سے ہے عظمت بھی

عظمت بھی ہے برکت بھی

محنت صبح و شام کریں

کام کریں بس کام کریں

ہر مشکل کٹ جائے گی

رستے سے ہٹ جائے گی

کام کریں اور نام کریں

کام کریں بس کام کریں

اک دوجے سے ہم مل کر

محنت کے بل بوتے پر

ساری دنیا رام کریں

کام کریں بس کام  کریں

 —–

برسات

وہ دیکھو اٹھی کالی کالی گھٹا

ہے چاروں طرف چھانے والی گھٹا

گھٹا کے جو آنے کی آہٹ ہوئی

ہوا میں بھی اک سر سراہٹ ہوئی

گھٹا آکے مینہ جو برسا گئی

تو بے جان مٹی میں بھی جاں آ گئی

زمیں سرسبزے سے لہرانے لگی

کسانوں کی محنت تھکانے لگی

جڑی بوٹیاں پیڑ آئے نکل

عجب پھول پتے عجب پھول پھل

یہ دو دن میں کیا ماجرا ہو گیا

کہ جنگل جنگل کا ہرا ہو گیا

—–

 اے بھولے بھالے بچو

کہنا بڑوں کا مانو

مان باپ اور بڑوں کا مانا نہ جس نے کہنا

ممکن نہیں جہاں میں عزت سے اس کا رہنا

گر چاہتے ہو عزت کہنا بڑوں کا مانو

اے بھولے بھالے بچو

کہنا بڑوں کا مانو

تم کو خبر نہیں ہے اپنے برے بھلے کی

جتنی ہے عمر تھوڑی اتنی ہی ہے عقل چھوٹے

چاہو اگر بڑائی کہنا بڑوں کا مانو

اے بھولے بھولے بچو

کہنا بڑوں کا مانو

—–

آؤ مل کر کام کریں

آؤ مل کر کام کریں

 دولت وہ جو سب کی دولت

 عزت وہ جو سب کی عزت

 مل کر پیدا نام کریں

 آؤ مل کر کام کریں

 مل کر محنت کرنے والو !

 محنت کا دم بھرنے والو !

 محنت صبح و شام کریں

 آؤ مل کر کام کریں

—–

جاڑا آیا

جاڑا دھوم مچاتا آیا

کپڑے گرم پہناتا آیا

کیسی ہوا ہے سر سر سر

کانپتے ہیں سب تھر تھر تھر

سورج بھی چھپ جاتا ہے جلدی

لگتی ہے اس کو بھی سردی

ہا ہا  ہی ہی ہی ہو ہو

ہائے رے سردی ہائے رے سردی

سارے بدن میں برف سی بھر دی

 —–

آؤ دل بہلائیں

آؤ آؤ دل بہلائیں

حمد خدا کی گاتے جائیں

جس نے دنیا پیدا کی

جس نے ہم کو روٹی دی

پانی مٹی آگ ہوا

کھیل ہے اس کی قدرت کا

سورج دن کو شب کو تارے

کیسے اچھے پیارے پیارے

آؤ آؤ خوش ہو جاؤ

گیت اسی کی حمد کے گاؤ

—–

خواب نگر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ از اسد اللہ

خواب نگر میں سنتے ہیں، کچھ پیڑ بھی اونچے اونچے ہیں

جن کی شاخوں پر جھولا کرتے سپنوں کے خوشے ہیں

سپنوں کی گٹھلی کے اندر رستے راج محل کے ہیں

آؤ خواب نگر چلتے ہیں

ڈھونڈیں ایسی بستی جس میں خوشحالی بھی بستی ہو

خون نہ ہو پانی جیسا نا موت جہاں پر سستی ہو

امن اور چین جہاں کے باسی ، رعنائی اور سر مستی ہو

آؤ خواب نگر چلتے ہیں

سونے چاندی کی دیواریں اونچے اونچے بنگلے ہوں

ہیروں کا آنگن ہو اور بلوریں سارے جنگلے ہوں

دم بھر میں دھنوان ہمارے شہر کے سارے کنگلے ہوں

آؤ خواب نگر چلتے ہیں

اچھے انسان بننے کا اک پیارا خواب سجائیں گے

آؤ ہم اس دھرتی کے چاند ستارے بن جائیں گے

سچ ہو جائیں خواب ہمارے ایسا کچھ کر جائیں گے

آؤ خواب نگر چلتے ہیں

—–

مچھلی کا بچہ

انڈے سے نکلا

پانی میں پھسلا

ابو نے پکڑا

بھیا نے کاٹا

امی نے پکایا

سب نے کھایا

بڑا مزا آیا

—–

تتلی

تتلی ہوں میں تتلی ہوں

پھولوں سے نکلی ہوں

ٹھنڈا پانی پیتی ہوں

اوپر پنکھا چلتا ہے

نیچے منا سوتا ہے

منے کی ماں موٹی

کھائے ڈبل روٹی

ڈبل روٹی مسی

منے کی ماں رسی

ڈبل روٹی تازی

منے کی ماں راضی

—–

لڑنا بھڑنا کام برا ہے

لڑنے کا انجام برا ہے

آپس میں مل جل کر رہنا

جھوٹی بات نہ منہ سے کہنا

اپنے بڑوں کا کہنا مانو

دل سے ان کو اچھا جانو

کام کی ہیں یہ ساری باتیں

کیسی پیاری پیاری باتیں

—–

بلی کا بچہ

بلی کا بچہ

چوہوں کا چچا

آنگن میں بیٹھے

مونچھوں کو اینٹھے

وہ دیکھو نکلا

موٹا سا چوہا

بلی نے جھپٹا

داتنوں سے کاٹا

تکڑوں میں باٹا

پھر  بولا ٹا ٹا

—–

بے بی بے بی سوجا

لال پلنگ پرسوجا

امی ابو آئیں گے

لال کھلونے لائیں گے

کھیلتے کھیلتے بھوک لگی

کھالو بیٹا مونگ پھلی

مونگ پھلی میں دانا نہیں

ہم تمھارے نانا

نانا گئے دلی

وہاں سے لائے بلی

بلی کے دو بچے

اللہ میاں سچے

سچے سچے جائیں گے

بھائی کی دلہن لائیں گے

بھائی کی دلہن کالی

سو نخرے والی

ایک نخرا ٹوٹ گیا

بھائی کا منہ سوج گیا

Categories :

Comments are closed.

Translate »