Urdu Poems for Children (Kids) – 3- Bachon Ki Nazmain

آؤ دل بہلائیں

آؤ آؤ دل بہلائیں

حمد خدا کی گاتے جائیں

جس نے دنیا پیدا کی

جس نے ہم کو روٹی دی

پانی مٹی آگ ہوا

کھیل ہے اس کی قدرت کا

سورج دن کو شب کو تارے

کیسے اچھے پیارے پیارے

آؤ آؤ خوش ہو جاؤ

گیت اسی کی حمد کے گاؤ

—–

جادو گر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ از منیر نیازی

جب میرا جی چاہے میں جادو کے کھیل دکھا سکتا ہوں

آندھی بن کر چل سکتا ہوں بادل بن کر چھا سکتا ہوں

ہاتھ کے ایک اشارے سے پانی میں آگ لگا سکتا ہوں

راکھ کے ڈھیر سے تازہ رنگوں والے پھول کھلا سکتا ہوں

اتنے اونچے آسماں کے تارے توڑ کے لا سکتا ہوں

میری عمر تو بس ایسے ہی کھیل دکھاتے گزری ہے

اپنی سانس کے شعلوں سے گلزار کھلاتے گزری ہے

جھوٹی سچی باتوں کے بازار سجاتے گزری ہے

پتھر کی دیواروں کو سنگیت سناتے گزری ہے

اپنے درد کو دنیا کی نظروں سے چھپاتے گزری ہے
—–

ٹوٹ بٹوٹ کے مرغے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ از صوفی غلام مصطفیٰ تبسم

ٹوٹ بٹوٹ کے دو مرغے تھے دونوں تھے ہوشیار

ایک مرغے کا نام تھا گیتو اک کا نام گیتار

اک مرغے کی دم تھی کالی اک مرغے کی لال

اک مرغے کی چونچ نرالی اک مرغے کی چال

اک پہنے پتلون اور نکر اک پہنے شلوار

اک پہنے انگریزی ٹوپی اک پہنے دستار

اک کھاتا تھا کیک اور بسکٹ اک کھاتا تھا نان

اک چباتا لونگ سپاری اک چباتا پان

دونوں اک دن شہر کو نکلے لے کر آنے چار

پہلے سبزی منڈی پہنچے پھر لنڈا بازار

اک ہوٹل میں انڈے کھائے اک ہوٹل میں پائے

اک ہوٹل میں سوڈا واٹر اک ہوٹل میں چائے

پیٹ میں جوں ہی روٹی اتری مرغے ہوش میں آئے

دونوں اچھلے ناچے کودے دونوں جوش میں آئے

اک بولا میں باز بہادر تو ہے نرا بٹیر

اک بولا میں لگر بھگا اک بولا میں شیر

دونوں میں پھر ہوئی لڑائی تھی تھی تھو تھو تھا

دونوں نے کی ہاتھا پائی ہی ہی ہوہو ہا

اک مرغے نے سیخ اٹھائی ایک مرغے نے ڈانگ

اک کے دونوں پنجے ٹوٹے اک کی ٹوٹی ٹانگ

تھانیدار نے ہنٹر مارا چیخے چو چو چو

ٹوٹ بٹوٹ نے گلے لگایا بولے ککڑوکو

—–

چو چو کرتی آئی چڑیا

 

چو چو کرتی آئی چڑیا

دال کا دانہ لائی چڑیا

مور بھی آیا

کوا بھی آیا

چوہا بھی آیا

بندر بھی آیا

بھوک لگی تو چڑیا رانی

مونگ کی دال پکائے گی

کوا روٹی لائے گا

لا کے تجھ کو کھلائے گا

مور بھی آیا

کوا بھی آیا

چوہا بھی آیا

بندر بھی آیا

چو چو کرتی آئی چڑیا

چلتے چلتے ملے گا بھالو

ہم بولیں گے ناچو خالو

منا ڈھول بجائے گا

بھالو ناچ دکھائے گا

مور بھی آیا

کوا بھی آیا

چوہا بھی آیا

بندر بھی آیا

چو چو کرتی آئی چڑیا

دال کا دانہ لائی چڑیا

—–

سب سے پیار کرو

سب سے پیار کرو

پیارے لوگوں پر اپنی ہر چیز نثار کرو

سب سے پیار کرو

یہ سب دنیا اپنا گھر ہے

مل کر جس میں ہم رہتے ہیں

کرتے نہیں کسی سے نفرت

سب کو اچھا ہم کہتے ہیں

اس جذبے سے اور بھی ذہنوں کو سرشار کرو

سب سے پیار کرو

گورا ہو یا کالا ہو

سب کے سب ہیں دوست ہمارے

ہے فرمان ہمارے نبی کے

ہیں انسان برابر ساتے

چھوڑ کے نفرت چاہت کی راہیں ہموار کرو

سب سے پیار کرو

—–

اچھا بچہ

سچ بولے سچا کہلائے                   وہ بچہ اچھا کہلائے

وقت پے سوئے وقت پے جاتے        وقت پے کھیلے دوڑے بھاگے

ورزش کرنا عادت اس کی               سب سے اچھی صحت اس کی

سادہ ستھرے کپڑے پہنے               اس کی چستی کے کیا کہنے

سلجھے بال چمکتا چہرہ                 ماتھے پر نیکی کا سہرا

پڑھنے کا ہے شوق زیادہ                نیک عمل اور نیک ارادہ

استادوں کا کہنا مانے                     ان کی بات کو اچھا جانے

کھیلے کودے جھولا جھولے                        لکھنا پڑھنا کبھی نہ بھولے

بات کرے تو خوشبو آئے                ایسا بچہ سب کو بھائے

—–

 

آلو میاں

آلو میاں آلو میاں کہاں گئے تھے

سبزی کی ٹوکری میں سو رہے تھے

بینگن نے لات ماری رو رہے تھے

گاجر نے پیار کیا ہنس رہے تھے

مٹر سے کیڑا نکلا ڈر گئے تھے

کھیرے نے “بھاؤ” کیا بھاگ گئے تھے

آلو میاں آلو میاں کہا گئے تھے

سبزی کی ٹوکری میں سو رہے تھے

Categories :
Tags :

Comments are closed.

Translate »