Aaloo-Matar; Aaloo-Qeema Paratha Recipe in Urdu

آلو مٹر کے پراٹھے

یوں تو پراٹھے ناشتے کا حصہ ہوتے ہیں لیکن جب ان کو سبزیوں مثلا آلو ، مٹر سے بھر کر پکایا جائے تو پھر یہ ناشتے کے ساتھ خاص نہیں رہتے۔ دن کا کوئی بھی وقت ہو بڑے شوق سے کھائے جاتے ہیں۔ خاص طور سردیوں میں رات کے وقت اگر چائے کے ساتھ کھائے جائیں تو مزا دو بالا ہو جاتا ہے۔

اجزائے ترکیبی

آلو، درمیانے سائز کے دو عدد

مٹر ایک پاؤ

پیاز ایک درمیانے سائز کی باریک کٹی ہوئی

انار دانہ حسب ذائقہ

لال مرچ پسی ہوئی آدھا چائے کا چمچ

نمک حسب ذائقہ

ہری مرچیں چار عدد باریک کٹی ہوئی

ہرا دھنیا باریک کٹا ہوا حسب ذائقہ

سویا، باریک پسا ہکٹا ہوا حسب ذائقہ

آٹا ایک کلو

کوکنگ ائل حسب ضرورت

پکانے کا طریقہ اور تیاری کے مراحل

سب سے پہلے آلو اچھی طرح ابال کر ان کا چھلکا اتار لیں اور سل پر رکھ کر اچھی طرح پیس لیں۔

اس کے بعد ایک پتیلے  کو ہلکی آنچ  پر چولہے پر چڑھا دیں اور اس میں دو کھانے کے چمچ تیل ڈال کر پیاز اچھی طرح نرم کر لیں۔ پھر اس میں باقی تمام اشیاء بشمول مٹر کے اس تیل میں ڈال کر اچھی طرح بھون لیں۔ کم از کم دس سے پندہ منٹ ہلکی انچھ پر اس طرح پکائیں کہ ہر چیز اچھی طرح گل جائے۔ ان تمام چیزوں کو چولہے سے اتار کر ٹھنڈا کر لیں اور پھر ان کا بھرتہ بنا کر اس میں آلو شامل کر لیں۔

اب آٹا گوندھنے کا مرحلہ ہے۔ آٹا گوندھتے وقت اس میں نمک اور تیل تقریبا چار کھانے کے چمچ شامل کر کے اچھی طرح گوندھ لیں اور پھر اسے ململ کے کپڑے میں تقریبا دس منٹ تک لپیٹ کر رکھ دیں۔ اب آٹے کے پیڑے بنائیں اور ہر پیٹرے میں حسب ضرورت آلو مٹر کا بھرتہ شامل کرتے جائیں۔ پیڑے بنا کر تھوڑی دیر کے لیے فریج میں رکھ دیں۔

تمام مراحل کامیابی کے ساتھ طے ہو گئے اب صرف پکانے اور کھانے کا مرحلہ باقی رہ گیا۔ جب بھی اشتیاق ہو ایک پیڑا لیں، اہستہ آہستہ ہلکے ہاتھ سے بیل کر روٹی بنا لیں اور کوکنگ آئل میں تل لیں۔

ایک بات ذہن نشین رکھیں کہ کھانے کے دوران کسی بھی سخت چیز مثلا انار دانے یا کسی اور گرم مصالحے کا منہ میں آ جانا اکثر کوفت کا باعث ہو تا ہے، اس لیے اگر انار دانے کو پانی میں بھگو کر اچھی طرح پیس لیں اور پھر اسے شامل کر لیں تو ذائقہ بہتر ہو جائے گا اور کوفت سے بھی بچا جا سکے گا۔

مہمانوں کے سامنے پیش کرنی ہو یا خود نوش کرنی ہو آلو مٹر کے پراٹھے کے ساتھ ہر چٹنی لذت میں اضافہ کر دیتی ہے، اس لیے کوشش کریں کہ ہری چٹنی کے ساتھ پیش کریں۔

———————

آلو قیمے کا پراٹھا

اجزائے ترکیبی۔

قیمہ  اچھی طرح ابلا ہوا  ۔ ایک کپ

آلو، درمیانے سائز کے دو عدد   ۔ ابلے ہوئے

پیاز ایک درمیانے سائز کی  ۔ باریک کٹی ہوئی

انار دانہ حسب ذائقہ ۔  باریک پسا ہوا

لال مرچ پسی ہوئی  ۔ آدھا چائے کا چمچ

نمک  ۔ حسب ذائقہ

ہری مرچیں  ۔ چار عدد باریک کٹی ہوئی

ہرا دھنیا باریک کٹا ہوا  ۔ حسب ذائقہ

سفید زیرہ ۔ ایک  چائے کا چمچ

چاٹ مصالحہ ۔  آدھا چائے کا چمچ

گرم مصالحہ  ۔  آدھا چائے کا چمچ

سویا، باریک پسا ہوا  ۔ حسب ذائقہ

مکھن  ۔ تین کھانے کے چمچ

آٹا ایک کلو  / اگر میدہ پسند ہو تو آٹے کی جگہ میدے کا استعمال کیا جا سکتا ہے

کوکنگ ائل  یا دیسی گھی پراٹھا تلنے کے لیے ۔ حسب ضرورت

بنانے کا طریقہ اور تیاری کے مراحل

سب سے پہلے قیمہ اور آلو چولہے پر چڑھا دیں تا کہ جب تک دیگر مصالحہ جات تیار ہوتے ہیں کہ اچھی طرح گل جائیں۔ گلنے کے بعد ان کو پیس کر ان کا بھرتہ بنا لیں۔ پھر دیگچی میں حسب ضرورت تیل ڈال کر اسے ہلکی آنچ پر چڑھا دیں اور تمام اشیاء پیاز، لال مرچ، ہری مرچ، انار دانہ، گرم مصالحہ وغیر ۔۔۔۔ اس میں ڈال کر دو سے تین منٹ کے لیے ان کو پکنے دیں یہاں تک کہ سب کچھ نرم ہو جائے۔ اس کے بعد ان تمام اشیائے کو آلو اور قیمے کے بھرتے میں اچھی طرح مکس کر  کے آمیزہ بنا لیں۔

تمام اشیاء کی تیاری کے بعداگلا مرحلہ ہے آٹا گوندھنے کا جو کہ روز کا معمول ہے۔ لیکن قیمے والے پراٹھے بنانے ہوں تو آٹا گوندھتے وقت اس میں نمک کے ساتھ مکھن بھی شامل کر لیں۔

اب آخری مرحلہ ہے اس آمیزے اور آٹے کو ملا کر پراٹھے بنانے کا۔ اس کے دو طریقے ہیں۔ ایک تو یہ ہے کہ سارا آمیزہ آٹے میں شامل کر  کے تھوڑی دیر فرج میں رکھ دیا جائے اور پھر ہلکے ہاتھ سے بیل کر پراٹھے بنا لیے جائیں۔ دوسرا طریقہ یہ ہے کہ آٹے کے پیڑے علیحدہ سے بنا لیں۔ ایک پراٹھے کے لیے دو پیڑے بنائیں جو عام پیڑے سے سائز میں قدرے چھوٹے ہوں۔ ان پیڑوں کی دو روٹیاں بنا لیں۔ اب ان دونوں کے درمیاں وہ آمیزہ اچھی طرح پھیلا کر اس بھر لیں کہ یہ دو روٹیاں دو تہیں بن جائیں۔ اب اس روٹی کو احتیاط سے گھی میں تل لیں ۔ آپ کا پراٹھا تیار ہے۔

ہر قسم کے پراٹھے کو پیش کرنے کے لیے چٹنی کا ساتھ پراٹھے کی لذت بڑھا دیتا ہے۔ چٹنی کی ترکیب انتہائی آسان  اور سادہ ہے۔ ہری مرچ چار عدد، خشک دھنیا دو چائے کے چمچ اچھی طرح پیس لیں اور دو کپ دہی میں شامل کر لیں۔ بہترین چٹنی تیار ہو جائے گی۔

Categories :
Tags :

Comments are closed.

Translate »